Home » خبریں » This virus may have stolen deadly DNA from black widow spiders

This virus may have stolen deadly DNA from black widow spiders

وائرس میں کالی مکڑی کا ہلاکت خیز زہر دریافت

black-spider

یہ زہر ’’کھڑکھڑیا سانپ‘‘ کے زہر سے بھی 15 گنا زیادہ خطرناک اور ہلاکت خیز ہوتا ہے۔ فوٹو فائل

ٹینیسی: امریکی سائنسدانوں نے وائرس کے ڈی این اے میں وہ جین دریافت کرلیے جو اب تک صرف ’’کالی بیوہ‘‘ (بلیک ویڈو) نامی مکڑی میں دیکھے گئے تھے اور جنہیں استعمال کرتے ہوئے یہ مکڑی ایک خطرناک زہر تیار کرتی ہے۔

کالی بیوہ مکڑی (بلیک ویڈو اسپائیڈر) کا زہر’’کھڑکھڑیا سانپ‘‘ (rattlesnake) کے زہر سے بھی 15 گنا زیادہ خطرناک اور ہلاکت خیز ہوتا ہے۔

امریکا کی وانڈربلٹ یونیورسٹی کے 2 ماہرین نے’’فیج‘‘ قسم کے ایک وائرس پر تحقیق سے یہ جین دریافت کیا ہے اور یہ پہلا موقعہ ہے کہ جب کسی جانور میں پایا جانے والا کوئی جین ایک وائرس میں بھی دیکھا گیا ہے۔

loading...

spider-585x299

 البتہ یہ واضح نہیں کہ ارتقائی طور پر وائرس سے یہ جین سیاہ مکڑی میں منتقل ہوا یا وائرس نے سیاہ مکڑی سے یہ جین حاصل کیا ہے۔

 فیج وائرس جسامت میں دوسرے وائرسوں سے خاصے بڑے ہوتے ہیں اور جب وہ کسی خلہے یا جرثومے پر حملہ کرتے ہیں تو اس کی بیرونی جھلی پھاڑ کر اسے ہلاک کردیتے ہیں۔

 دوسری حیرت انگیز بات  یہ ہے کہ فیج قسم کے وائرس عموماً یا تو صرف جرثوموں کو متاثر کرتے ہیں یا پھر جانوروں کے خلیات پر حملہ آور ہوتے ہیں۔ لیکن یہ فیج وائرس بہ یک وقت ان دونوں پر حملہ آور ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*